اجازت دو! ۔۔۔۔از رابعہ بصری

تم مجھے جوڑنے آئے تھے میرے کِرچی کِرچی وجود کےسبھی ٹکڑے اپنے سنہری ہاتھوں سے چْن کے میرے سبھی گھاوُ … More