کمی

“اب یہ نوکری کیوں؟” “میں اپنے جینے کا ثبوت چاہتی ہوں۔” “جینے کا ثبوت گھر کے کام کاج سے نہیں ملتا؟” “نہیں______ان سے تو مجھے اپنی موت کا یقین ہو جاتا ہے!” نور نے بہت کوشش کی نوکری ڈھونڈنے کی،مگر نہ ملی!اسے مصروفیت چاہیے تھی۔کوی ایسی بے ہنگم مصروفیت جو اسکی فرصتوں کو غرق کر […]

Read More…

لیبر ڈے_____چند لفظی کہانی

:لیںبر ڈے۔۔۔۔۔ “ہزار ہزار روپے ملیں گے!” سب بھاگے اسکی طرف۔۔۔۔”کس چیز کے؟؟” آج چھٹی تھی سب دیہاڑی دار مزدور بیکار بیٹھے تھے۔ ” لیبر ڈے پر اک سیمنار ہے اس میں حاضرین بنکر بیٹھنا ہے!” تحریر و کور: صوفیہ کاشف یہ بھی پڑھیں: پچاس لفظی کہانیاں _______________ ینگ وومنز رائٹرز فورم اسلام آباد چیپٹر […]

Read More…

دیوانے

دیوانے نے کارواں کاآغاز کیا۔ وہ کچھ اس طرح سرگرمِ سفر ہوا کہ دوبارہ پلٹ کے پیچھے نہیں دیکھا۔ اپنے سر پر کفن باندھ کے چلا تھا۔ اپنی دھن کا پکا تھا۔ اس لئے حالات سے نہیں گھبرایا۔غمِ جاناں جب اسے رلاتا تو وہ بس ہنس کر تمام دکھ درددرگزر کرتا۔سماں بگڑتا سنورتا لیکن وہ […]

Read More…

پچاس لفظوں کی کہانی۔پارٹ 3

پچاس لفظوں کی کہانی ” ہار ” بشیر اور بلال نے ہار خرید کر ماں کو دیئے اور کہا کہ کل مدرسے میں ہماری دستار بندی ہے ۔ وہاں سے واپسی پر ہمیں یہ ہار پہنائیے گا ۔ جہاز آئے ، مدرسے پر بمباری کی اور چلے گئے ۔۔۔ دروازے پر ماں ہار ہاتھوں میں […]

Read More…

“خالہ جی “_______افشین جاوید

کمزور اور نحیف سا وہ وجود ، مشفق سا چہرہ، اندر کو دھنسی ہوئی آنکھوں پر موٹے موٹے شیشوں والا چشمہ لگائے ، ہم تواسی فکر میں گھلتے کہ اس چشمے کا وزن ان کے وزن سے زیادہ ہی ہو گا وہ اسے کیسے سنبھالتی ہوں گی ، مگر کبھی کبھی جو لگانا ہوتا تھا […]

Read More…

بے وفا_______صوفیہ کاشف

مخنی سا قد،سفید رنگ،جھکے کندھے،چہرے پر مسکینیت لیے وہ روزگار کی تلاش میں دوبئی آیا تھا ،آج اسکا انڈے جیسا سفید رنگ جھلسا ہوا گندمی اور چہرے پر لقوہ کا حملہ ہو چکا تھا۔عمر کی کتنے ہی طویل موسم گرما اس نے اس ننگے سر آگ کے تندور میں گزارے تھے جہاں سال کے دس […]

Read More…

حد__________صوفیہ کاشف

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ “چلو تمھارے ساتھ چلتا ہوں!” “کہاں تک چلو گے؟” “جہاں تک تم چاہو!” اگر میں کہوں کہ زمان و مکان کی آخری حد تک؟؟؟تو چلو گے ساتھ؟!” “اگر تم کہو گی کہ مکاں سے لا مکاں تک ,,,,تو بھی چلوں گا!” میں اسکے چہرے کی طرف مڑ کر اسکی آنکھوں کے رنگ کھوجنے لگی […]

Read More…