“اس ناول کو مکمل کیوں نہیں کیا؟”

“کیونکہ مجھے اسے کبھی بھی مکمل نہیں کرنا تھا۔یہ ادھوری ذندگی کی کہانی ہے،ہمیشہ ادھوری ہی رہے گی۔”

“تم اس پر محنت کر لیتیں تو یہ ایک شاہکار تحریر ہوتی۔”

“اس پر بہت محنت کی میں نے مگر اسے مکمل نہ کر سکی،”

“کیوں نہیں کر سکی تم”

“وہ مانا ہی نہیں!

وہ کسی صورت مانتا نہیں اور اس کی مرضی کے بغیر یہ کہانی ہمیشہ اپنے ادھورے پن کو روتی رہے گی۔”

“یہ تو کہانی ہے ناں؟ اصل ذندگی کی داستان تو نہیں!”

“تمھیں کیا خبر ________ اصل داستان ہی تو ہے!۔میری ہر کہانی میری اپنی داستان ہے،مجھ پر بیتی ہزاروں کہانیوں میں سے ایک کہانی۔۔۔ہر کہانی کو مکمل کرنے سے پہلے اس پر سے سفر کرنا پڑتا ہے۔جب تک ذندگی کا آدھا چاند پورا نہیں ہو گا میرے ناول کا انجام کیسے ہو گا؟”____

___________

کور ڈیزائن اور تحریر:صوفیہ کاشف