معاشرے کی فلاح و بہبود کے لۓ ہمارے یہاں طالب علموں کے لیے مختلف اقسام کے مواقع فراہم کیے جاتے ہیں تاکہ وہ ملک کی ترقی میں اپنا بہترین کردار ادا کرسکیں اور ساتھ ہی اپنا مستقبل بھی روشن کرسکیں۔ ایسے ہی ہلٹ بزنس اسکول اور یونائٹڈ نیشنز کی کاوش کے تحط ہلٹ پرائز کی شروعات کی گئ جس کااہم مقصد کاروباری تنظیم کاروں کو یہ باور کرانا ہے کہ وہ زیادہ سے زیادہ ملک و قوم کی خدمت میں اپنا وقت صرف کریں۔ اس کی بدولت کاروباری افراد کو مختلف قسم کے منظر ناموں میں شامل کیا جاتا ہے تاکہ وہ اپنی تخلیقی صلاحیتوں کا استعمال کرتے ہوۓ بہترین آڈیازکا اختراح کریں۔ ہلٹ پرائزکی صورت میں ہمارے طالب علموں کو ایک زبردست موقع دیا جارہا ہے۔ ہلٹ پرائزکا انعقاد ہمارے ملک کی بے شمار یونیورسیٹیزمیں کیا گیاجس میں آ ئ بی اے کراچی بھی شامل ہے۔ اور ہر بار کی طرح اس بار بھی آئ بی اے کے ہونہار طالب علموں نے ہلٹ پرائز کو منظم کرنے کی پوری طرح سے تیاری کر لی ہے اور نومبر 14، 2020کواس کا انعقاد کیا جارہا ہے۔

ہلٹ پرائزمیں طلباء بھر پور حصہ لیتے ہوۓ نہ صرف اپنا خود کا ایک بزنس آڈیا پیش کریں گے بلکہ اس بزنس کو شروع کرنے کے لیے انہیں یونائٹڈ نیشنز کی جانب سے۱ ڈالر ملین بھی دیے جائیں گے تاکہ وہ اپنے بزنس آڈیے کو عمل میں لاسکیں اور معاشرے کی ترقی میں اپنا کردار بخوبی نبھائیں۔ لیکن یہ رقم بھی صرف اسے ہی دی جاۓ گی جس کا آیڈیا واقعتاً عمل میں جانے کے لائق ہو،اورکوئ شک نہیں کہ یہ طلباء کے لیے کامیابیاں سمیٹنے کا ایک سنہری موقع ہے۔ اس سال، ہلٹ پرائز کا جو پلان ہے جس کے تحط کاروباری تنظیم کار اپنے آیڈیاز کو تشکیل دیں گے، وہ ہے، “زیرو ہَنگر”۔ “زیرو ہنگر” کا مقصد ہے معاشرے میں کچھ ایسے ترقی یافتہ کاموں کی ابتداء کرنا جس سے بھوک کو مٹایا جاسکے، کھانے کی چیزوں کو نیوٹریشنز کے ذریعے سے بہتر کیا جاسکے اور ایگریکلچر کو بھی پائدار کیا جاۓ۔ اسی خیال کی بنیاد پر تمام لوگ اپنے اپنے آیڈیاز متعارف کرائیں گے۔

میری طالب علموں سے درخواست ہے کہ اس مقابلے میں ضرور حصہ لیں تاکہ انہیں اپنے اندر کے ہنر کا جاننے کا اور ان سے فائدہ حاصل کرنے کا پورا پورا موقع ملے۔ اس سے نہ صرف وہ اپنی زندگی سنوار سکتے ہیں، بلکہ ملک و قوم کی خدمت میں اپنا کردار بخوبی نبھا سکتے ہیں۔ ویسے بھی ہمارے معاشرے کو ایسے ہی لوگوں کی ضرورت ہے جن میں انسانیت زندہ ہو۔ مقابلے میں حصہ لیں تو اس نیت سے کہ اتنا زبردست آیڈیا آپ لے کر آئیں جسے واقعی عمل میں لایا جاسکے اور جس پر محنت کرنے کے لۓ آپ پوری طرح سے تیار ہوں۔ یاد رہے کہ انسانیت کی خدمت زندگی کا ایک اہم تقاضہ ہے اور جو ایسا نہیں کرتا، وہ ایک بے مقصد زندگی گزار رہا ہے۔

________________

تحریر: رمشا یاسین

کور فوٹوگرافی: اریبہ بلوچ