عرصے بعد آئینہ دیکھا تو ایسے ہی اک خیال آیا۔غلط انتخاب یا غلط فیصلہ کیا صرف چہرے کی رونق چھین لیتا ہے یا روح کو بھی کھوکھلا کر دیتا ہے؟عارض اب بھی گلاب ہے۔ہونٹ پنکھڑیوں کی صورت ۔آنکھوں کی جگنووں کو مات دیتی چمک بھی کہیں نہیں گئ۔۔کھوکھلے ہی سہی پر قہقہے اب بھی لگتے ہیں۔پھر کیا ہے جو بے رونق ہے؟کیا خوبصورت لگنے کیلئے خوش ہونا ضروری ہے؟سوالوں کے ڈھیر پہ کھڑی سوچ رہی ہوںجب خوش رہنے کی اداکاری کر کے بھی کوئ خوشی نہ ملے تو دنیا ختم ہو جاتی ہے؟کیا دنیا ختم ہو رہی ہے،یا پھر میں؟یا شاید۔۔وہ لوگ جو آپ کی دنیا ہوں وہ بدل جائے یا بے نقاب ہوجائیں تو دنیا ختم ہو جاتی ہے۔۔!کسی وقت میری لاش کے سر خانے رکھا اک  بے ربط  جملوں کی سسکیوں اور آہوں بھرا  خالی خط ملے تو دکھی مت ہونا۔۔لاشوں کو مرتے وقت کم از کم اتنی تکلیف نہیں ہوتی جتنا مردہ ہو کر زندہ رہنے کی اداکاری کرتے وقت ہوتی ہے۔  !!

اک دوست کے نام!

ا۔ز

__________

تحریر:ا،ز

کور ڈیزائن و فوٹوگرافی: صوفیہ کاشف