چھوٹی بہو کو مرے آج چالیسواں دن ہو گیا  تھا ۔ بڑے بھیا نےمعاملات کے خوبصورتی سے سلجھ جانے پہ   خدا کا شکر ادا کیا ” اللہ کا شکر ہے چالیسواں بھی خیریت سے ہوگیا خیرات کی دیگیں بلکل صحیح مقدار میں تیار کی گئ تھی”۔بڑی بھابھی نے فخریہ اپنے سرتاج کو دیکھا ۔پھر چھوٹے بھائ کی طرف شرارت بھری نگاہ ڈالی ” ہاں چھوٹے بھیا! تو کب جائیں بیوی تلاش مہم پہ” اکیلا رہنا کس قدر مشکل کام ہے-ساس کی طرف رخ کرکے کہنے لگی۔اماں کب تک اکیلا رہنے کا ارادہ ہے اسکا؟ اب تو چالیسواں بھی ہوگیا۔بڑے بھیا نے اضافہ کیا ” کوئ خیال رکھنے والا بھی تو  ہو”اماں نے  دور فرش پہ برتن مانجھتی ،بیٹی کے ویراں چہرے پہ اک نگاہ ڈالی ۔ بیٹی کو بیوہ ہوئے چھ سال بیت گئے تھے۔

_____________

تحریر:

( الف۔ز)

کور ڈیزائن و فوٹوگرافی:

صوفیہ کاشف