بے حسی_____________عمارہ احمد حجاب

مجھے وبا نے نہیں
بے حسی نے مارا ہے،

میں خوش رہا تو
سبھی قہقہے لگاتے تھے،
میں چپ ہوا تو
سبھی بولتے ہی جاتے تھے..
کسی نے یہ نہ کہا
تیرا “غم” ہمارا ہے..
مجھے وبا نے نہیں
بے حسی نے مارا ہے…

میں شعر کہتا تو
سب واہ واہ کرتے تھے
جو گھر بناتا وہ
تباہ کرتے تھے
کھڑا ہوا ہوں تو
چُبھنے لگا ہو‍ں آنکھوں کو..
مجھے کسی نے نہیں
وقت نے سنوارا ہے..

وبا کا دکھ میرا دکھ ہے
نہ میرا غم، غمِ جاں
مجھے لِسان نے،
انساں نے
خوب وارا ہے…

تھکا ہوا ہوں تو
بس دشت نے پکارا ہے.
مجھے وبا نے نہیں
بے حسی نے مارا ہے…

______________

کلام:حجاب(عمارہ احمد)

فوٹوگرافی و کور ڈیزائن: صوفیہ کاشف

13 Comments

    1. کہتے تو ٹھیک ہیں مگر کتابیں عقلمند لوگ لکھتے ہیں اور اصل زندگی میں واسطہ احمقوں سے پڑ جاتا ہے۔یہ بھی کسی نے کہا ہے!

      Like

        1. Sociologist Charles Derber describes this tendency as “conversational narcissism.” Often subtle and unconscious, it’s the desire to take over a conversation, to do most of the talking, and to turn the focus of the exchange to yourself. Derber writes that it “is the key manifestation of the dominant attention-getting psychology in America.”
          True indeed! An excerpt from the given article! pakistan is so full of narcissists in every sense actually.

          Liked by 1 person

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.