جو پتھروں کو کاٹ سکتا ہے
گیت جو دھاگے کو کپڑا بنا سکتا ہے
گیت جو سخت زمینوں سے پانی نکال لاتا ہے
گیت جو دھات کو پگھلا کر
رکابی، گلاس، چمچہ، ڈھالتا ہے
وہ گیت میں تمہیں مکمّل سنُا سکتا ہوں
اگر تم بھوک کے دنوں میں ملو تو
____________

نظم:احمد نعیم

فوٹوگرافی و کور ڈیزائن:صوفیہ کاشف