خواب سمندر میں کھو جاتے ہیں

اور آنکھیں صحراؤں میں

دور سفر پر جانے والوں کی یادیں

دل کی الماری میں رکھی رہ جاتی ہیں

جب تنہائی آنکھوں میں

اور پتے صحنوں میں

آنکھ مچولی کھیلیں تو

دوپہریں کتنی چھوٹی ہو جاتی ہیں

بچھڑے ہوؤں سے کون کہے

سرما کی پہلی بارش میں

ریستورانوں کی رونق بڑھ جاتی ہے!

________________

کلام:نصیر احمد ناصر

فوٹوگرافی وکور ڈیزائن: صوفیہ کاشف