بچھڑے ہوؤں کے لیے ایک نظم ________نصیر احمد ناصر

خواب سمندر میں کھو جاتے ہیں

اور آنکھیں صحراؤں میں

دور سفر پر جانے والوں کی یادیں

دل کی الماری میں رکھی رہ جاتی ہیں

جب تنہائی آنکھوں میں

اور پتے صحنوں میں

آنکھ مچولی کھیلیں تو

دوپہریں کتنی چھوٹی ہو جاتی ہیں

بچھڑے ہوؤں سے کون کہے

سرما کی پہلی بارش میں

ریستورانوں کی رونق بڑھ جاتی ہے!

________________

کلام:نصیر احمد ناصر

فوٹوگرافی وکور ڈیزائن: صوفیہ کاشف

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.