باتیں__________حمیرا فضا

ـــــــــــ

کچھ امیر خوابوں سے

غریب باتیں کرتی ہوں

بڑی عجیب باتیں کرتی ہوں

اندھیرے سے روشنی کی باتیں

خالی گھر ۔۔۔۔۔۔زندگی کی باتیں

کانٹوں سے پھول کی بات

خوشبو سے دھول کی بات

باتیں چاروں اور رہتی ہیں

باتیں موسموں کی ساتھی ہیں

میری باتوں کی یہ مشکل ہے

ہزار باتیں اور اک دل ہے

اِن باتوں کو سمجھ جاؤ جو

سمجھنا بھی ایک حماقت ہے

حماقت کر ہی بیٹھے اگر تم

مان لونگی

تمھیں محبت ہے ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

_____________

کلام:حمیرا فضا

کور ڈیزائن: صوفیہ کاشف

Advertisements