تمہیں میرے سورج کی سلامی دینی ہے________سدرتہ المنتہیٰ

****

یہاں کچھ دیر پہلے کی زندگی کے آثار ہیں

آج رات میز پر موم بتیوں کے انتظار میں جل گیا تھا

تمہاری یاد سے چرایا ہوا آخری لمحہ ۔۔

میں گھڑی کی شکل اختیار کرگئی ہوں

وقت میرے چہرے پر لکھا ہوا ہے

اسے میں نے جھیلا ہے

اسے میں نے سمیٹا ہے

اسے میں نے سینچا ہے

تم

ایک اونچی پرواز پر سوار ہو

اور پلک جھپکتے ہی یہاں سب راکھ ہونے والا ہے

میں نے کل جو خواب دیکھا تھا

سناٹا اسکے سچ ہونے کی خبر دے گیا ہے

وقت پہروں سے کیفیت میں بدلنے لگا ہے

یہاں ہوا کی نمی ختم ہونے کو ہے

میری زمین پر کشش ثقل نے آخری تیر چھوڑا ہے

اور میں معلق ہونے لگی ہوں

خلاع نے اپنا راستہ کھول دیا ہے

مجھے اب دھرتی پر ایندھن کی کوئی ضرورت نہیں رہے گی

نہ ہی تمہارے جھوٹے لفظوں کی مکار باتوں کی ہی۔۔

مجھے محبت کی بھیک سے کڑی نفرت ہونے لگی ہے

آج کے بعد میں زندگی چھوڑ کر گزرجائوں گی

اور دھرتی نے مجھے آخری بار بتایا ہے کہ میں اس سے بچھڑکر رونا چاہوں گی

دھرتی نے میرے پائوں جکڑے ہیں

اور مجھ سے میری موت مانگ لی ہے۔۔

تم بتائو ۔۔

کیا میں وہی ہوں جس نے بلندی میں اڑنے کے خواب دیکھے تھے؟

اور اڑنے لگی ہوں

مگر دھرتی نے میری اڑان سے پہلے مجھ سے میرا جسد خاکی مانگ لیا ہے

میں دھرتی کی قرض دار ہوں

میں نے اس پر بچپن میں گڑیاں کھیلی ہیں

میں نے اس کی سطح پر چلنا سیکھا ہے

میں نے اس کا دیا ہوا نوالہ کھایا ہے

میں اسے کیسے انکار کروں۔۔

میں نے سوچا ہے کہ میں اپنا جسد خاکی اسے سونپ کر خلاع میں پرواز کرجائوں ۔۔۔

وہاں بہت ساری کہکشائیں ہونگیں۔۔

مگر مجھے آج بھی یقین ہے کہ اپنی موت کے بعد میں دھرتی کی یاد میں آنسو بہائوں گی

مجھے گڑیاں کھیلنے کا دن یاد ہوگا

مجھے موم بتیوں کا انتظار بھی یاد ہوگا

مجھے گھڑی میں تبدیل ہوجانا بھی یاد ہوگا

ہاں مگر صبح ابھرنے سے پہلے

تمہاری پرواز کے پر ٹوٹیں گے تو ایک کام ضرور کرنا

تم میرے سورج کی سلامی دینے آنا

اس سے پہلے۔۔

ہاں مگر اس سب سے پہلے

مجھے اپنی قسمت کی چابی گھمانے دو

یہاں اب سے کچھ دیر پہلے کی زندگی کے آثار ہیں

مجھے موت سے کچھ دن پہلے

انتظار کی گھڑی کو موڑنا ہے

موم بتیوں کو بجھانا ہے

مجھے سورج سے کچھ ادھار ملنے والا ہے

مجھے اب خود کے لئے کچھ جینا ہے

خود اپنی موت سے پہلے مرنا ہے!

خود اپنی موت سے پہلے مرنا ہے!

*******

کلام:سدرتہ المنتہیٰ

کور ڈیزائن:صوفیہ کاشف

Advertisements