مکالمہ_________صبا جرال

وہ کہتا ہے
“تعلق کو میری جاناں !
کوئی عنوان دے ڈالو”
میں کہتی ہوں “کبھی بے نام رشتے بھی
بہت ہی خاص ہوتے ہیں
دلوں کا ربط ہونا بس ضروری ہے محبت میں”
وہ کہتا ہے “میں ڈرتا ہوں جدائی سے
کہیں ایسا نہ ہو دنیا تمہیں ہی چھین لے مجھ سے”
میں ہنستی ہوں یہ کہتی ہوں
“تمہاری ہوں یقیں کر لو
یقین کے ساتھ محبت کا سفر آسان ہوتا ہے
فقط دل کا نہیں روح کا بھی یہ پیمان ہوتا ہے
نبھانا ہے نبھائیں گے ، اسے ہر حال میں ہم تم ”
وہ کہتا ہے مری جاناں !
“اگر دے دو مرے ہاتھوں میں اپنا ہاتھ
زمانے سے میں لڑ لوں گا
اسے تسخیر کر لوں گا
یقیں میرا فقط تم ہو
بجز تیرے نہیں میں کچھ ”
میں کہتی ہوں
” ارے پاگل
زمانے کا ہو ڈر جس کو
وہ آگے بڑھ نہیں سکتا
محبت کر نہیں سکتا ”

______________

شاعرہ:صبا جرال

کور ڈیزائن: صوفیہ کاشف

Advertisements