تبدیلی آئی ہے!_______عروج احمد

تبدیلی کے پہلے سو دن ۔۔۔ اور ۔۔۔ تبدیلی کے دو رخ ۔۔۔

پچاس لفظوں کی کہانی ” تبدیلی “

” پہلے ہمارے دیس میں ایک نظام تعلیم رائج تھا ۔ غیر ملکی دورے ، پرتعیش طرزِ زندگی ، پروٹوکول ، ‘ کشکول ‘ کا کوئی تصور نہ تھا ۔
حکمران عوام کے سامنے جوابدہ ہوتے تھے ۔
کوئی نہ جانتا تھا ‘ سیاسی وعدے ‘ کیا ہوتے ہیں ۔”

” پھر ؟ ”

” پھر ، ہمارے دیس کے باسیوں نے ” تبدیلی ” کا راستہ چن لیا ۔”

۔۔۔

پچاس لفظوں کی کہانی ” تبدیلی “

” انقلاب لائیں گے ۔”
” مہنگائی کا خاتمہ ؛
بنیادی سہولیات مفت فراہم کریں گے ۔”
” سادگی اختیار کریں گے ۔”
” بیرونی امداد نہیں لیں گے ۔”

” مہنگائی ، امداد کا کشکول ، سٹیٹس-کو ۔۔۔ یہ کیسی “تبدیلی” ہے ؟”

” کامیابی کے لیے اپروچ میں “تبدیلی” ناگزیر ہے ۔”
” جو “تبدیلی” کے کلیے سے واقف نہیں ہوتا ، وہ “لیڈر” نہیں ہوتا ۔”

__________

عروج احمد

کور ڈیزائن: صوفیہ کاشف
۔۔۔

Advertisements