“میربل شاری ___________ثروت نجیب ــــ

*************** بےتابی سے انتظار کرتی دو آنکھیں وجود کے ہر مسام میں ڈھل چکی تھیں ـ شب اپنی گہرائی پہ … More