“آئیں شریک حیات سے جھگڑیں “_________فاطمہ عمران

شادی شدہ خواتین کو چاہیے کہ اپنے شوہر سے فضول بحث و مباحثہ میں الجھنے کی بجائے سیدھا جھگڑے کی بات پر آئیں۔۔ کیونکہ ازدواجی زندگی کا یہی وہ واحد میدان ہے جہاں انکی جیت یقینی ہے۔
لہذا جیسے ہی آپ انہیں گھر میں چین کا سانس لیتے دیکھیں۔۔سمجھ جائیے کہ اب جھگڑے کا وقت ہوا چاہتا ہے۔
ہمیشہ یاد رکھیں کہ مرد حضرات ایک ہی بات کو لے کر بار بار جھگڑا نہیں کر سکتے۔ یہ کوالٹی صرف آپ کے پاس ہے۔ لہذا “ٹاپک” کو لے کر بالکل مت گھبرائیں ۔
اگر جھگڑا انکی کسی غلطی کو لے کر کرنا ہے تو شروعات “دیکھا میں نے تو پہلے ہی کہا تھا” سے کریں۔۔اور اگر آپ سے کوئی غلطی ہو گئی ہے اور الزام ان کے سر ڈالنا ہے تو بات”آپ کو تو میری ذرا فکر نہیں ہے” سے شروع کریں ۔
جھگڑا کرتے ہوئے اس بات کا خاص خیال رکھیں کہ کہیں خدانخواستہ وہ آپ کی بات دھیان سے تو نہیں سن رہے۔
جھگڑے کا سب سے بہترین موقع انکے ٹی وی دیکھنے کا وقت ہے۔ تبھی دل کی بھڑاس اچھی طرح نکال لیں ۔اور جب وہ اچانک سے ہڑبڑاتے ہوئے ٹی وی سے نظریں ہٹا کر تھوڑا حیران ہو کر پوچھیں “ہیں کیا کہا؟”
تب دل ہی دل میں خوش ہوتے ہوئے پہلے تو فورا خدا کا شکر بجا لائیں کہ انہوں نے غلطی سے بھی آپ کی کوئی بات سن نہیں لی۔ اور پھر فورا منہ بسور کر بیٹھ جائیں۔ ایسے میں “ہاں ہاں سنتے ہی کہاں ہیں آپ میری؟ آپ کو میری قدر ہو تب نا! ” شاندار نتائج کا ضامن ہو سکتا ہے۔
بس اب وہ جتنا مرضی داڑھی مونچھ کا زور لگائیں آپ بھی لمبی چپ سادھ لیں۔۔۔ جیسے آپ نے رشتہ پکا ہوتے وقت منہ پر قفل لگا رکھا تھا ۔
اور جب وہ تھک کر دوبارہ ٹی وی کی طرف متوجہ ہوں تو حسب موقع پھر سے ایک آدھ سڑا ہوا جملہ پھینکا جا سکتا ہے۔ مگر یاد رہے کہ اس بار والیم کافی نیچا ہونا چاہیے۔۔آواز ان تک ہرگز نہ پہنچے۔۔۔
جھگڑے میں بلامقصد ایک ہی بات کو بار بار دہرانے کے بجائے “تابڑ توڑ” ورائٹی لے کر آئیں تاکہ پہلے سے لگے بندھے جواب دے کر وہ اپنا بچاؤ نہ کر سکیں ۔
جہاں الزام ان پر ڈالنا ممکن نہ ہو وہاں اپنی قسمت کی خرابی کو قصوروار ٹھہرائیں۔
نیز انہیں ہر دو جملوں کے بعد بتاتی رہیں کہ آپ کے بغیر ان کا گزارہ ناممکن ہے۔
دورانِ جھگڑا اگر دلائل ختم ہو جائیں تو شادی سے بھی پہلے کے گلے شکوے بیچ میں لے آئیں۔ اس سے وہ گھبرا کر اصل مدعا بھول بیٹھیں گے۔
جب اچھی طرح ٹائم پاس کر لیں یا جھگڑا کر کے تھک جائیں تو فوراً “بہت برے ہیں آپ” کہہ کر مان جائیں۔۔۔

نوٹ: ہر دو جھگڑوں میں کم از کم ایک ہفتے کا وقفہ ضرور دیں۔

_________________

(مضمون طنزو مزاح ہے ،سنجیدگی ممنوع ہے)

تحریر:فاطمی عمران

فوٹوگرافی:صوفیہ کاشف

Advertisements

2 Comments

Comments are closed.