منزل مل ہی جائے گی_____

💎

راہِ سفر میں
ایسے ہی منزل نہیں ملتی
یہاں کچھ پانے کے لیے
بہت کچھ کھونا پڑتا ہے
بہت سے لوگ ملتے ہیں
بہت سے روگ لگتے ہیں
بہت سے دل تڑپتے ہیں
مگر سمجھوتا کرنا پڑتا ہے
کبھی رستے میں گرتے ہیں
کبھی منزل کو تکتے ہیں
پھر ایک لمحہ ایسا بھی آتا ہے
کہ اک احساس ہوتا ہے
کہ منزل دور ہی سہی
مگر منزل پا ہی لیں گے ہم
اسی اک آس کو لیے
غم و خوشی کو ساتھ لیے
روانہ ہم سفر پر ہیں
بہت سی آزمائشوں سے
گزر کر بھی نہیں بھٹکے
پھر اک دن حوصلہ ہوا
کہ منزل مل ہی جائے گی
ہاں
منزل مل ہی جائے گی

___________________

شاعرہ : آبرؤِ نبیلہ اقبال

ینگ وویمن رائٹرز فورم ، اسلام آباد چیپٹر

فوٹوگرافی:خرم بقا،آئر لینڈ

Advertisements