“کیسی جھوٹی دعائیں تھی اس کی”___________عظمی طور

🌷

تم نے خواب دیکھے ہیں؟؟؟
کیسے میٹھے ہوتے ہیں
نیند کی وادی میں
کیسے اڑتے پھرتے ہیں
کیسے نرم نرم سے
اور پھولے پھولے بادل سے
آنکھ کھل جانے پر
کیسا اچھا لگتا ہے
اور اگر کبھی جو
آنکھیں کھلی رہ جائیں
ننھے ننھے تاروں سے
ٹمٹماتے رہتے ہیں
گال کے وسط میں
بھنور بنانے لگتے ہیں
لیکن وہ جو عمر تھی
خواب کو نبھانے کی
اور اسکی مٹھی میں
خود کو بند رکھ کر
کہیں دوور کھو جانے کی
وہ تو اب نہیں رہی
اور وہ جو اپنے تھے
خواب جو دکھاتے تھے
جن کے اپنا ہونے سے
خواب زندہ رہتے تھے
وہ اپنے تو خواب ہوئے
اور اپنا خواب دیکھے کون __!!!

______________

شاعرہ:عظمیٰ طور

فوٹوگرافی: صوفیہ کاشف

Advertisements

2 thoughts on ““کیسی جھوٹی دعائیں تھی اس کی”___________عظمی طور

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

w

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.