گناہ گار______از رضوانہ نور

🌹آج ارادہ تو نہیں تھا کچھ لکھنے کا….ِمگر پھر ایک پوسٹ پہ نظر پڑ گئی….اور وہ خیال جو ایک عرصے سے دماغ میں پنپ رہا تھا اس نے مجبور کر دیا کہ اسے قرطاس پہ بکھیر دیا جائے….
مجھے سمجھ نہیں آتا کہ ہم مسلمان ہیں یا ابھی تک ہندو ،نصرانی ،یہودی یا عیسائی چلے آرہے ہیں…..اس معاشرے کا مرد آخر خدا سے اپنی بخشش کروا کے آیا ہے یا اس کا روزِ قیامت کے حساب کتاب سے کوئی واسطہ اور تعلق نہیں……اک عرصہ ہوا آرائش و زیبائش ترک کر رکھی وجہ تو معلوم نہیں مگر لاشعور میں کبھی نہ کبھی کچھ نہ کچھ گردش ضرور کرتا ہے……کبھی امی کی آواز تو کبھی دادو کی…کبھی ابو کی نصحیت تو کبھی بھائی کی ڈانٹ……ایسے کپڑے مت پہنو…ایسا ڈوپٹہ مت اوڑھو…..دروازے پہ مت جاؤ……بازار جائے بنا چین نہیں آتا کیا……یہ تمہیں دوستیاں پالنے کی کیا ضرورت ہے…….آج کل کی لڑکیاں توبہ……بات کرنے کی تمیز نہیں….اور نجانے کی کیا….گانوں میں گونجتا ہے….سو ہزاروں سوالوں کے جواب دینے سے بہتر ہے انسان یہ کام ہی چھوڑ دے…….. اس وقت لگا کرتا تھا کہ شاید یہ ہماری تربیت کا حصہ ہے…..اس سے ہماری شخصیت نکھرے گی…..بہت سے مثبت پہلو دکھتے تھے……..مگر پھر اس سوشل میڈیا سے واسطہ پڑا…اور آنکھیں تب کھلیں جب پانی سر سے گزر چکا تھا….
ہر دوسری حدیث …ہر دوسری آیت جو نظر سے گزرتی ہے ایک ہی پیام ہوتا ہے….جب عورتیں یہ کریں گی تو قیامت آئے گی، وہ کریں گی تو قیامت آئے گی…..آخری وقت میں عورتوں کا رویہ ایسا ہو گا….وغیرہ وغیرہ…پھر مزے کی بات کہ اس کے ساتھ باقاعدہ تصاویر ایڈ کی جاتی ہیں خواتین کی…..مجھے اس بات سے اختلاف نہیں کہ ایسی کوئی حدیث نہیں….لازمی ہو گی…بالکل ہو گی…عورتیں بھی گناہگار ہوتی ہیں….کمزور ہوتی ہیں ،شیطان کے بہکاوے میں جلدی آتی ہیں….مگر جو بات بتاتا ہے وہ یہ کیوں نہیں بتاتا کہ وہ حساس بھی زیادہ ہوتی ہیں ،توبہ بھی جلد کرتی ہیں….اچھا چھوڑیں! بات ہو رہی تھی کہ یہ ساری منفی باتیں خواتین کی ہی کیوں نشر کی جاتی ہیں؟….کیا میرے آقا نے ایسی کوئی بات نہیں بتائی کہ مرد یہ کرے گا تو قیامت آئے گی؟…..اتنی بڑی حدیث ہے کہ جب مائیں ذلیل کی جائیں گی تو قیامت آئے گی….تو کوئی مجھے بتائے کہ ماں کے بارے میں سوال مرد سے ہو گا یا عورت سے…….
جناب عرض یہ کرنا ہےکہ ہم کوئی یہودی یا عیسائی نہیں ہیں کہ آدم کا گناہ بھی حوا کے سر پھینک کر بری ہو جائیں…عورت کو نن بنا دیں اور مرد کو آزاد چھوڑ دیں……یہ جو سوشل میڈیا ہے ناں، آج کا معاشرہ یہی ترتیب دے رہا ہے….خدارا اسلام کا مذاق مت بنائیں..عورت کو جتنی عزت اسلام دیتا ہے وہ نہ سہی دو درجے کم ہی دے دیں…..اور اپنے احساسِ کمتری کو چھپانے کے لیے اپنی بہنوں بیٹیوں کو تنہائی کے آسیب کے حوالے مت کریں……خود آپ کوٹھوں پر بھی جائیں اور بہن کو اس کے جائز حق ،پسند کی شادی سے بھی محروم کر دیں….یہ کوئی اسلام نہیں ہے…..ہم کس طرف جا رہے ہیں یہ ہمیں سوچنا ہے….عورت کی عزت اتنی سستی نہیں کہ اسے سوشل میڈیا کے بازار میں بیٹھ کے ڈسکس کیا جائے……..احادیث ہوں یا قرآن کی آیت جب تک خود اسے کسی مستند کتاب یا قرآن سے نہ پڑھیں٬اس کا پس ِمنظر٬آگے پچھے لنک دیکھ کے شئیر کریں…..کہ آدھی بات پہ تو نماز بھی معاف ہے٬کن شرائط پر معاف ہے اسکے لئے آگے پیچھے دیکھنا ہو گا….اس سے کچھ آپ کے علم میں بھی اضافہ ہو گا اور عمل کی توفیق بھی نصیب ہوگی…کہ آنکھیں کلامِ الہی سے کبھی دھوکہ نہیں کھاتیں…….

_______________

رضوانہ نور………..

گرافکس:صوفیہ کاشف

Advertisements