کیا کرو گے

🌷 جو دعا روتی رہی رات بھر

مقبول ہو جاے تو کیا کرو گے

چلتے چلتے پاؤں کے سامنے

میرا در آ جاے تو کیا کرو گے

وہ جس خواب سے تم ڈرتے

سونے سے بھی کتراتے ہوں

وہ سچ بنکر جو زمین پر

اتر کے آ جاے کیا کرو گے

تیری طلب کا کشکول میں نے

لے جا کر قبلہ میں رکھ دیا ہے

قطرہ قطرہ بھی گرتے اس میں

تیرا ساتھ بھر جاے تو کیا کرو گے

زندگی کے شور سے ڈر کر

بیچ رستے میں گھبراتے ہو

اور زندگی ہی ہاتھ میں گر

راہ تھما جاے تو کیا کرو گے

تیری الفت اور میری چاہت

جو تمام عمر کا عذاب بنا ہے

یہ گر پلٹ کے ثواب بن کے

عمر بنا جائیں تو کیا کرو گے

______________

شاعرہ:علیزے محمد

کور ڈیزائن: صوفیہ کاشف

Advertisements