سجدہ سہو از صوفیہ کاشف

مزید کے لئے لنک کلک کریں!

SofiaLog.Blog

                                                                                                      ….

سعدیہ پانچوں نمازیں پڑھتی اور پانچوں وقت سجدہ
سہو کرتی.انتہای توجہ سےنماز کا آغاز کرتی.رکوع سجود میں آہستگی برتتی، الگ الگ لفظ
ادا کرتی مگر نہ جانے لڑی کہاں سے ٹوٹتی، موتی کدھر سے بکھرتے کہ آخیر تک پہنچتے
پہنچتے گمشدہ ہو جاتی.کتنی رکعت ہو گییں اور کتنے سجود کچھ حساب نہ رہتا.فقط رہ
جاتی اک نارسای. ایسی ٹوٹی پھوٹی عبادتوں کو جوڑ لگانے کا ایک ہی طریقہ تھا اسکے
پاس، سجدہ سہو! تین رکعتوں کو چار  کرنے کا ،سجود ورکوع کی گنتی پوری کرنے کا
اسیر نسخہ.سجدہ سہو سعدیہ کی عادت ثانیہ بن چکا تھا اور شاید…

View original post 1,459 more words

Advertisements