ممی کی ڈائری______________ماں ،بچے اور پریوں کی کہانی

پچھلے کچھ دنوں سے اپنی داستان میں میں اپنا پسینہ پونچھتی رہی اور تھکی ہوی ماں کے دکھڑے روتی رہی۔۔۔۔ آج اس پریوں کی کہانی کی بات کرتے ہیں جسکا نام بچے ہیں،ممتا ہے اور ماں بچے کی کہانی ہے۔جب مائیں بچے پال پال تھک جاتی ہیں تو پھر ان کی پریوں کی کہانی بھی بوڑھی ہو جاتی ہے میری طرح ،وہ کہتے ہیں ناں

Familiarity breeds contempt!

تو پھر اس پریوں کی کہانی کے اجلے گہرے رنگ بھی دھندلے اور بے تاثر لگنے لگتے ہیں ۔ہمیشہ نہیں،بس جب تک بچے جاگتے ہیں ،بچے سو جائیں تو پریوں کی کہانی، ماں اور بچے کی وہی میٹھی داستان پھر سے تازہ ہو جاتی ہے۔آپ بھی لیتی ہوں گی اکثر سوے بچوں کی پپیاں!😎

تو آج کچھ کرتے ہیں ایسی ہی میٹھی میٹھی باتیں! میں نے اپنے بچوں کو سکھایا ہے اک شوگر مینیا۔کبھی کبھی جب میں میٹھے میٹھے موڈ میں ہوں تو بچوں سے کہتی ہوں “میری شوگر لو ہو گئی ہے!

My sugar is getting low!

یہ بھی پڑھیں:ممی کی ڈائری:دعا،ممی اور انگریزی ہدایت نامے

اور تینوں بھاگے آتے ہیں مجھے جپھی ڈالنے تا کہ میرا شوگر لیول بڑھ سکے۔وہ جانتے ہیں کہ اسکا مطلب ہے کہ آؤ اماں کو اک جپھی دو!پھر کبھی کبھی میری بیٹیاں آ جاتی ہیں ۔کہتی ہیں

“Mama!you need sugar???”

مما! آپکو شوگر چاہئے؟؟؟”

اور میں سمجھ جاتی ہوں اب انکا گلے لگنے کا من ہے۔اس چھوٹی سی اک پریکٹس کا بہت فایدہ ہے۔بچہ الجھتا نہیں۔کوئ بہانہ نہیں ڈھونڈتا،اسے اک کھیل مل جاتا ہے سیدھی دل کی بات کے اظہار کا۔یہ جھپھیاں اور پپیاں بہت ضروری ہوتی ہیں۔جیسے ہمیں چاہیے ہوتی ہیں۔ اپنے بہن بھائیوں،دوستوں اور شریک حیات کے ہونے کا احساس ،اسی طرح چھوٹے بچوں کو بھی چاہیے ہوتی ہے ہماری محبت کی گرمی ،ہمارے بازوؤں کا حصار! اگرچہ یہ نسخہ بھی ہر وقت یاد نہیں رہتا مگر جب بھی آزمایا جاتا ہے بہت ہی پرلطف اور شیریں ہے۔بچے کو دل سے لگا کر کبھی کبھی ماں کے دل کو ٹھنڈک پہنچانے کی بھی بہت ضرورت ہوتی ہے۔ضرورتوں اور زمہ داریوں کی سختی بہت کچھ بھلائے رکھتی ہے تو کبھی کبھی اس طرح کے سیدھے اور ڈائریکٹ محبت کے اظہار دل کو بہت سکون دیتے ہیں،ماوں کو بھی اور ماؤں کے راج دلاروں کو بھی۔

یہ بھی پڑھیں :ماں اور معاشرہ

پھر بچوں کے لنچ باکس بنانے کا روز کا جنجھٹ۔یہ مشکل لنچ باکس کبھی کبھی بہت خوبصورت ہو جاتے ہیں بچوں کے لئے جب ان میں نگٹس،کھیرے،فرائز اور جوسز کے ساتھ ہم ایک چھوٹا سا خط ڈال دیں۔کوی بچے کی پڑھنے کی صلاحیت کے مطابق

l love you darling

Miss you

My cute son!

وغیرہ،اگر آپکا بچہ بھی میری طرح نرسری میں ہے تو، اور اگر وہ کچھ لائنیں پڑھ سکتا ہے تو کوی چند حرفی محبت کا اظہار،کوئ چھوٹی سی کہانی،کوی مزے کی نظم کے ساتھ لگے ایک دو سٹکرز: اس سے کیا ہوتا ہے؟ یہ ہم ماوں کے لیے تو اک اضافی زحمت ہی ہے مگر جب ہم ان کے لئے ساری زندگیاں وقف کر جاتے ہیں،سارے پیسے لٹا کر انکی الماریاں کپڑے جوتوں اور کھلونوں سے بھر دیتے ہیں،تو پھر یہ تو بہت ہی اک زرا سی کوشش ہے۔اس سے یہ ہوتا ہے کہ بچہ جب سکول جا کر سب بچوں کے بیچ لنچ باکس کھولتا ہے تو اس میں سے نکلتی ہے مما!!!😀بچہ ایک دم اپنے دوستوں میں معتبر ہو جاتا ہے۔سکول میں جہاں وہ آپکو بھول چکا ہوتا ہے وہ محبت سے یاد کرنے لگتا ہے۔اور یہی وہ میٹھی میٹھی خوشگوار یادیں ہوتی ہیں جنہیں آنے والے مستقبل میں وہ یاد رکھتا ہے۔ہماری روک ٹوک،نصیحتیں تو بہت بعد کے زمانے میں انکو سمجھ میں آنی ہیں۔یہ چھوٹے موٹے کبھی کبھار کے محبت کے اظہار ماں اور بچے کے رشتے میں خاصا اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: ممی کی ڈائری؛قربانی کی گاے اور تربیت

کیا آپ کے بچے بھی اپنا گرا دانت تکیے کے نیچے رکھتے ہیں تا کہ ٹوتھ فیری انہیں آ کر لیجاے؟ آمنہ اور فاطمہ نے خوب دانت سنبھال سنبھال ٹشو پیپر میں لپیٹ کر تکیے کے نیچے رکھے ۔ساتھ چھوٹے چھوٹے خط بھی پری کو یہ بتانے کے لئے کہ انکو اس بار کیا گفٹ چاہئیے۔پھر آدھی رات کو ٹوتھ فئیری انکے تکیے کے نیچے سے خط اور دانت نکال کر اسکی جگہ ایم اینڈ ایمز رکھتی رہی۔یہاں تک کہ انکو خبر ہو گئی کہ یہ ٹوتھ فیری انکی مما ہی تھی۔ان پریوں کی کہانی کو ہم بہت وقت نہیں دے پاتے مگر جب کبھی بھی دیے سکیں دے ہی لینا چاہئیے۔ورنہ ماں ہونا وہ عہدہ ہے جسمیں پچھتاوے جان نہیں چھوڑتے۔کاش ایسے کر لیتے،کاش ویسے کر لیتے،،،مائیں اولاد کے لئے کر کر تھک جاتی ہیں پھر بھی پچھتاتی رہتی ہیں کہ وہ اچھی مائیں نہیں بن سکیں۔اسکی وجہ یہ نہیں کہ ہم ناکام مائیں تھیں۔بس ہماری حدیں یہیں تک تھیں۔انسان کے مقدر میں جتنی محنت ،جتنی کامیابی،جتنی شہرت،جتنی محبت لکھی ہو وہ اس سے زیادہ بھر نہیں پاتا!مگر ماؤں کا دل ہے کہ کچھ بھی کر کے ہمیشہ بے چین ہی رہتا ہے۔اسکی وجہ ہماری نااہلیت نہیں،ہمادی بے تحاشا محبت ہے۔

اور ایک سب سے اہم بات: کوالٹی ٹائم کی مسٹری!☝ساری ساری زندگی،پورے پورے دن اور راتیں،مکمل کئریر،دن رات کا چین دے کر بھی ہم مائیں بے چین رہتی ہیں کہ شاید ہم کوالٹی ٹائم نہیں دے سکے بچوں کو۔انکے ساتھ ملکر کھلونوں سے نہیں کھیلا،گھنٹوں بیٹھ کر کارٹون نہیں دیکھے،کہانیوں کی کتابیں نہیں سنائیں۔یہ کوالٹی ٹائم کی مسٹری بھی ان یورپی عورتوں کے لئے دریافت کی گئی ہے جنکے بچے سارا دن نینیز اور میڈز کے ہاتھوں پلتے ہیں،انکو منانے کے لئے کہ کسی بہانے کچھ وقت ضرور اپنے بچوں کے سنگ گزاریں۔وہ مائیں جو چوبیس گھنٹے بچوں کو اپنے ہاتھ سے نہلاتی دھلاتی ہیں،اپنے ہاتھ سے کھلاتی ہیں اور دن رات انکی ہر ضرورت کے لئے انکے قریب رہتی ہیں وہ بچوں کو کوالٹی ٹائم سے بہت آگے گزر کر کوالٹی لائف دے چکی ہیں ۔سو اس مدرز ڈے پر ہر الجھن سے نکلیں ،میرے ساتھ آپ بھی اپنے کندھوں پر اک تھپکی دیں اور کھل کر مسکرائیں!!!!پریوں کی اس کہانی کو ہر رنگ آپ نے دیا ہے۔

📌 Happy mother’s Day 💖💖💖

Write to mommy:

mommysdiary38@gmail.com

________________________

تحریر:ممی

کور ڈیزائن:ثروت نجیب،صوفیہ کاشف

(ایک ممی کی خواب ،جزبات اور تجربات پر مشتمل یہ سلسلہ ایک ممی کے قلم سے شروع کیا گیا ہے مگر پرائیویسی پالیسی کے تحت کرداروں کے نام،مقام اور معروضی حقائق تھوڑے بدل دئیے گئے ہیں ۔فوٹو اور ڈیزائن صوفیہ لاگ ڈاٹ بلاگ کی تخلیق ہیں ۔کسی بھی قسم کی نام اور مقام سے مشابہت محض اتفاقی ہے۔)

Advertisements

8 thoughts on “ممی کی ڈائری______________ماں ،بچے اور پریوں کی کہانی

  1. پیاری ممی ــ ہر ماں کی ایک سی کہانی ہوتی ہےـــ آپ کی تحریر نے ثابت کیا واقعی ماں’ مور ‘ مدر ‘ ‘مادد ایک ہی روپ والے کئی چہرے ہیں ـ شوگر والی بات درست کہی ـ میرے بچے بھی میری انرجی ہیں ـ اپنے بچوں کو میرا ڈھیر سارا پیار ـــ

    Liked by 1 person

  2. پیاری ممی ــ ہر ماں کی ایک سی کہانی ہوتی ہےـــ آپ کی تحریر نے ثابت کیا واقعی ماں’ مور ‘ مدر ‘ ‘مادد ایک ہی روپ والے کئی چہرے ہیں ـ شوگر والی بات درست کہی ـ میرے بچے
    بھی میری انرجی ہیں ـ اپنے بچوں کو میرا ڈھیر سارا پیار ـــ اگلی قسط کے انتظار کےـساتھ ــ محبت

    Liked by 1 person

  3. بہت کار آمد اور قابل عمل طریقے ہیں ساتھ ہی بچوں کی نفسیات کے عین مطابق. اگر بس یہ چھوٹا سا نکتہ ہم سمجھ لیں کی بچوں کی بدتمیزی بھی والدین خاص کر ماں کی توجہ کے لیے ہوتی ہے تو اس بدتمیزی کو تمیز اور محبت میں بدلنے میں زیادہ محنت نہ لگے بس ذرا سی توجہ ہی تو چاہیے.

    Liked by 1 person

    1. بالکل سچ کہا ابصار! بس یہ ہماری ٹیم کی ان گتھیوں کو سلجھانے کی ہی کوشش ہے۔بہت شکریہ حوصلہ افزائی کا!💖💖

      Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

w

Connecting to %s