یوم مئی کے موقع پر ینگ ویمن رائٹرز فورم کے تحت تخلیقی مقابلہ

ینگ ویمن رائٹرز فورم، اسلام آباد چیپٹر نے یوم مئی کو کسب حلال میں کوشاں ہر مزدور کی عظمت کو سلام پیش کرنے اور محنت کش طبقے کے ساتھ اظہار یکجہتی کے اظہار کے لیے ایک آن لائن ایکٹیویٹی کا اہتمام کیا اور تمام ممبران کو اس حوالے سے ایک قطعہ یا ایک پچاس یا سو لفظوں کی کہانی لکھنے کی دعوت دی ۔ تخلیقات جمع کروانے کا وقت شام چار بجے تا رات دس بجے متعین کیا گیا ۔

ان نگارشات کو پڑھ کر ان کی درجہ بندی کرنے کی خدمات ایک مقامی شاعر فقیر سائیں کو دی گئیں اور دو نقد انعامات ۔۔۔ ایک شاعری اور ایک نثر کے لئے ۔۔۔ مختص کیے گئے ۔

فورم کے اسلام آباد چیپٹر کی ممبران نے اس سرگرمی میں جوش و خروش سے حصہ لیا اور نہ صرف اپنی تخلیقات پیش کیں بلکہ ساتھی ممبران کی تخلیقات پر تبصرے و گفتگو بھی کی ۔

🍀🍁🍀🍁🍀🍁🍀🍁

اس آن لائن مقابلے کے منصف فقیر سائیں نے مقابلے کے نتائج کا اعلان ان خیالات کے اظہار کے ساتھ کیا :

” محترم ینگ مصنفات
میں نے سب کہانیاں اور نظمیں پڑھیں اور بار بار پڑھیں ۔۔۔

ہمارے غربت زدہ معاشرے کی بدقسمتی یہ ہے کہ اب ہمارے سب تہوار چاہے وہ مذہبی ہوں یا اس کے علاوہ ، ہمارے تضادات کو اجاگر کرتے ہیں ۔
یومِ مئی بھی اسی زمرے میں آتا ہے ۔
سب کہانیوں میں انہی تضادات کو بیان کیا گیا ہے ۔ جو کہ درست اور متوقع بھی ہے ۔
سب کہانیاں اور نظمیں بہت اچھی ہیں ۔
اسلئے بہترین کا انتخاب بہت مشکل ہے لیکن مجھے ایک کہانی اور ایک نظم کا انتخاب کرنے کو کہا گیا ہے ۔ سو ۔۔۔

کہانیوں میں صوفیہ کاشف کی کہانی اپنے مختلف زاویے کے سبب بہتر لگی ۔
جبکہ شاعری میں فاطمہ عثمان کی انگریزی نظم جامع ہونے کے سبب بہتر لگی ۔
تمام شرکاء کو مبارکباد ۔

ملیں کسی سے تو حال پوچھیں
پھر اس سے آگے سوال پوچھیں
یہی ہے راہِ نجات سائیں
سوال پوچھیں سوال پوچھیں

دعا گو
فقیر سائیں ”

🌺🌸🌺🌸🌺🌸🌺🌸

صوفیہ کاشف کی اول قرار پانے والی کہانی

چند لفظی کہانی : لیںبر ڈے

“ہزار ہزار روپے ملیں گے! ”
سب بھاگے اسکی طرف۔۔۔
کس چیز کے، آج چھٹی تھی۔۔۔
سب دیہاڑی دار مزدور بیکار بیٹھے تھے۔
” لیبر ڈے پر اک سیمنار ہے اس میں حاضرین بن کر بیٹھنا ہے!”
۔۔۔

فاطمہ عثمان کی اول آنے والی انگریزی نظم

It’s odd to say it’s our day
We work hard oh yes
And melt drop by drop
With tears of our family
With fear of hungry days
With our babies insecure
And wages too low
We still work hard; yes.
We grow the crop leaf by leaf
And build structures brick by brick
And shed our blood to bring up strong
But our own goes weak,day after day
And we die often with grieve
Or by sorrowful hopelessness
And year after year
We r paid a tribute
To take a break
A day Without any wages
A day of hunger
They call,
The labour day….

By: Fatima Usman Zahid

🌸🌹🌸🌹🌸🌹🌸🌹

ینگ ویمن رائٹرز فورم ، پاکستان کی بانی اور روح رواں بشرٰی اقبال ملک نے اسلام چیپٹر کی اس کاوش کو سراہتے ہوئے کہا کہ مٸی کے دن کی چھٹی کا بہترین استعمال کیا گیا ۔ اسلام آباد چیپٹر کی کابینہ مبارک باد اور بے حد داد کی مستحق ہے ۔ اپنے خواب کو اتنے پر عزم ، پر خلوص اور سب سے بڑھ کر باصلاحیت ممبران کی موجودگی سے پورا ہوتا دیکھ رہی ہوں ۔

💐🌹 💐🌹 💐🌹 💐🌹

رپورٹ : عروج احمد (میڈیا ہیڈ، ینگ ویمن رائٹرز فورم، اسلام آباد چیپٹر)

Advertisements