نور________اریبہ بلوچ

میں نور ہو گیا ہوں

مرے دل میں مرے یار کا نور !

دنیا کے سبھی رنگ مجھ میں جذب ہوے ہیں

سب توانائیاں میرے اندر

ساری کائناتیں مجھ میں ضم

چاند بھی مرے وجود سے پھوٹتے نور سے پرنور

سورج کی تیز روشنی بھی

مرے دل کے نور سے بھرپور
میں موسی ‘ مجھ میں ہی طور

مجھ میں یار کا عکس،مجھ میں ہی نور
میں نور ہو گیا ہوں

مرے دل میں مرے یار کا نور

وجد میں ہوں رقص میں ہوں

نگاہِ یار کے حصار میں ہوں

روح دل میں بیٹھی ہے یار کے قدموں میں

“کہ یار مجھ میں،میں یار میں ہوں”

میں نور ہو گیا ہوں

مرے دل میں مرے یار کا نور !

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

شاعرہ:اریبہ بلوچ

کور ڈیزائن:صوفیہ کاشف

وڈیو دیکھیں:ابوظہبی کے ساحل پر آتش بازی کا مظاہرہ

Advertisements