غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔رضوانہ نور

نیند کی آغوش میں جب تم ہو
کاش تیری آغوش میں ہم ہوں

آنکھیں تیری جب ہمکلام ہوں
اِک بس ہمہ تن گوش ہم ہوں

تم دھڑکن سن سمجھ لینا جب
اظہارِمحبت میں خاموش ہم ہوں

بکھری زلف ہماری تم سنوارتے رہنا
بانہوں میں تری مد ہوش ہم ہوں

محفلِ عشق میں ساقی تم ہو
کرنے والے جامِ نوش ہم ہوں

اپنی قربتوں سے تن آگ لگادے نور
جب کبھی آتشِ خاموش ہم ہوں

……………

رضوانہ نور

وڈیو دیکھیں:ٹونی ہیڈلے کا لائف لائن،لائیو ان کنسرٹ

Advertisements

2 Comments

Comments are closed.