غزل۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔رضوانہ نور

نیند کی آغوش میں جب تم ہو کاش تیری آغوش میں ہم ہوں آنکھیں تیری جب ہمکلام ہوں اِک بس ہمہ تن گوش ہم ہوں تم دھڑکن سن سمجھ لینا جب اظہارِمحبت میں خاموش ہم ہوں بکھری زلف ہماری تم سنوارتے رہنا بانہوں میں تری مد ہوش ہم ہوں محفلِ عشق میں ساقی تم ہو […]

Read More…

کچھ سوال میرے بھی……….آمنہ نثار راجہ ( ینگ ویمن رائٹر فورم ا سلام آباد )

شاہ زیب زوروشور سے گرج رہا تھا۔۔۔جیسے کوئی انہو نی ہو گئی ہو۔۔کبھی غصے سے کمرے کے اندر چکر لگاتا تو۔۔کبھی کمرے سے باہر۔۔۔اس کاغصہ کسی ٹھاٹھیں مارتے ہوئے سمندر کی مانند تیز سے تیز تر ہوتا جا رہا تھا۔۔چہرہ غصے سے سرخ۔۔۔۔ اور آنکھیں جیسے ابھی اٌبل کر باہر آجائیں گی۔۔۔ بس ۔۔۔ میں […]

Read More…