” نیناں “

میرے نیناں سپنا دیکھیں
تجھ کو بس یہ اپنا دیکھیں

دیکھیں کیا کیارنگ جہاں کے
تیرا جب یہ گر کر سنبھلنا دیکھیں

خبر تیرے تبسم کی ہوتی ان کو
پھولوں کا جب یہ کھلنا دیکھیں

جھکتے ہیں خود خوف ِنظر سے
سرِآئینہ تیرا جب سنورنا دیکھیں

تڑپ تڑپ جاتے ہیں نیناں میرے
غیروں سے تیرا جب ملنا دیکھیں

مانندِ جامِ سکندر یہ بھر آتے ہیں
دل کا ترے لیے جو مچلنا دیکھیں

نور تو کچھ باقی نہیں ان میں
کس طور یہ اب تیرا اجڑنا دیکھیں

( رضوانہ نور)

فوٹو کریڈٹ:فرحین خالد

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.