ارضی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کوئی پی کے نام کا کنگن ہو! کوئی چُوڑا ہو! جسے بانجھ کلائیاں پہن سہاگن ہو جاویں مرا روپا، جوبن … More

“رقص” ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔سعدیہ بتول

سنو اے ہم سفر میرے یہی کانٹوں بھرا رستہ میری منزل کو جاتا ہے کہ اب خوشبو کا یہ موسم … More

“گنجلک بیلیں”۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔…ثروت نجیب

ہزاروں باتیں دل کی مُنڈیروں پہ چڑھی گھنی بیلوں کی مانند بےتحاشا بڑھتی جا رہی ہیں کشف کے کواڑوں پہ … More